Tuesday, August 30, 2016

آلو بخارا ذائقے دار پھل بھی ، علاج بھی



خوش ذائقہ پھل کو تازہ کھانے کے علاوہ سکھا کر مختلف کھانوں اور شربت بنانے میں بھی استعمال کیا جاتا ہے 
 فارسی میں اس کو آلو بخارا اور انگریزی میں Plum کہتے ہیں ۔ اس کا نباتاتی نام Prunus Dometica ہے ۔ آلو بخارا گرمیوں کے موسم کا ایک خوش ذائقہ اور خوش نما پھل ہے جس کو کیا بڑے اور کیا چھوٹے سب ہی پسند کرتے ہیں ۔ آلو بخارے کو پکا کر بھی کھایا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ اس کو سُکھا کر مختلف پکوانوں میں استعمال کیا جاتا ہے ۔ آلو بخارا کا شربت بہت شوق سے پیا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ آلو بخارے کی چٹنی اور جام بھی نہایت ذائقہ دار ہوتے ہیں اور ہمارے ہاں بہت شوق سے کھائے جاتے ہیں ۔ آلو بخارا ایک کھٹا میٹھا پھل ہے جس کی تاثیر سرد ہوتی ہے ۔ رنگت کے لحاظ سے آلو بخارا سرخی مائل گہرا ہوتا ہے۔آلو بخارا پاکستان، بھارت اور ایران میں پایا جاتا ہے ۔ آلو بخارا میں وٹامن اے ، وٹامن بی ، وٹامن سی ، وٹامن ای اور وٹامن کے پایا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ اس میں کیلشیم ، آئرن ، پوٹاشیم ، سوڈیم ، فاسفورس ، زنک اور میگنیشیم بکثرت پائے جاتے ہیں ۔ آلو بخارے کے طبی فوائد ٭ آلو بخارا قبض کشا ہے۔ ٭ آلو بخارا خون کو صاف کرتا ہے اور خون کی کمی کو دور کرتا ہے۔ ٭ آلو بخارا جلد اور چہرے کی شادابی کے لئے مفید ہے۔ ٭ آلو بخارا بلڈ پریشر کو نارمل رکھتا ہے۔ ٭آلو بخارا سرطان کے مریض کے لئے فائدہ مند ہوتا ہے۔ ٭آلو بخارا جسم سے فاسد مادوں کا اخراج کرتا ہے۔ ٭آلو بخارا بھوک کو بڑھاتا ہے۔ ٭آلو بخارا دل کی دھڑکن کو معمول پہ لاتا ہے۔ ٭آلو بخارا دماغ کو طاقت دے کر دماغی کمزوری کو دور کرتا ہے۔ ٭آلو بخارا یرقان کے مریضوں کے لئے مفید ہوتا ہے۔ ٭آلو بخارا صفرادی سر درد میں فائدہ مند ہے۔ ٭آلو بخارا بلغم کا اخراج کرتا ہے۔ ٭آلو بخارا پیشاب کی رکاوٹ کو دور کرتا ہے۔ ٭آلو بخارا بواسیر کے مریضوں کے لئے کھانا فائدہ مند ہے۔ ٭آلو بخارا پیاس بجھاتا ہے۔ ٭آلو بخارا گیس کو خارج کرتا ہے۔ ٭آلو بخارا جگر کو طاقت دیتا ہے۔ ٭آلو بخارا گرمیوں کے بخار میں کھانا مفید ہے۔ قارئین! آپ نے دیکھا کہ آلو بخارے میں اللہ تعالیٰ نے ہمارے لئے کیا کیا فوائد چھپا رکھے ہیں۔ ہمیں اس سے بھر پور فائدہ اٹھانا چاہیے تاکہ ہم کسی بھی خطرناک بیماری سے بچ سکیں آپ اپنی زندگی میں سبزیوں اور پھلوں کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں کیونکہ یہ طویل عمری کا سبب بنتے ہیں 

plum in urdu, 
plum health benefits, 
plum cake recipe,
plum pronunciation,
plum nutrition,
plum phones,
plum in pregnancy,
plum rewards,

Monday, June 13, 2016

سعودی لڑکی نے ایک ایسے ملک سے تعلق رکھنے واولے نوجوان سے شادی کر لی کہ انٹرنیٹ پر طوفان آ گیا،سعودی عرب میں ہنگامہ برپا


 سعودی مردوں کی غیر ملکی خواتین سے شادیاں معمول کی بات ہے لیکن حال ہی میں ایک سعودی خاتون نے جب ایک شامی باشندے سے شادی کی تو سعودی سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپاہوگیا۔ عرب نیوز کے مطابق سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک ویڈیو پوسٹ کی گئی جس میں حرب قبیلے کی ایک لڑکی کی شاید کی تقریب دکھائی گئی تھی۔ اس شادی کی سب سے اہم بات یہ تھی کہ حرب قبیلے کی لڑکی شامی باشندے سے شادی کررہی تھی۔ سعودی خواتین کی غیر ملکیوں سے شادی کو مملکت میں پسندیدگی کی نظر سے نہیں دیکھا جاتا اور خصوصاً اعلیٰ سماجی مرتبے کے حامل حرب قبیلے کی لڑکی کی شام کے باشندے سے شادی کو تو نہایت غیرمعمولی واقعہ قرار دیا گیا۔
یہ ویڈیو سامنے آنے کے بعد سعودی سوشل میڈیا پر پرجوش بحث مباحثے کا آغاز ہوگیا۔ جہاں ایک طرف نسل پرستی کے مخالف اس شادی کو ایک اچھی مثال قرار دے رہے ہیں وہیں سعودی قوم پرست اس پرسخت تنقید بھی کررہے ہیں۔ ٹویٹر پر تبصرہ کرتے ہوئے ایک صاحب نے لکھا ”مدینہ میں سرانجام پانے والی شادی اس بات کی اچھی مثال ہے کہ خدا کے نزدیک عزت و مرتبے کا معیار صرف تقویٰ ہے، نہ کہ قومیں اور نسلیں۔“ سعودی لڑکی کی شامی مرد سے شادی کی مخالفت کرنے والے ایک صاحب نے لکھا ”یہ اس کا حق ہے کہ وہ جس سے چاہے شادی کرے لیکن کل یہ چیخ و پکار مت کرے کہ اس کا خاوند اور بچے غیر ملکی ہیں اور انہیں سعودی شہریت دی جائے۔“
سعودی خواتین کی غیر ملکیوں سے شادی کے ایک سخت ترین مخالف نے لکھا”شادی زندگی بھر کا معاملہ ہے۔ میں سمجھتا ہوں کہ ایک سعودی لڑکی کی شامی شخص سے شادی بہت بڑی غلطی ہے۔ میری خواہش ہے کہ یہ آخری سعودی لڑکی ہو جو کسی غیر ملکی سے شادی کررہی ہے ۔“

ایمپائر کا غلط فیصلہ، سری لنکن کھلاڑیوں نے لارڈز کے تاریخی میدان میں ایسا کام کر دیا کہ نئی تاریخ رقم کر دی، گوروں کو ان کے دیس میں ہی آئینہ دکھا دیا



لارڈز (مانیٹرنگ ڈیسک) کسی بھی قوم کیلئے اس کے ملک کا وقار سب سے پہلے ہوتا ہے اور اگر کسی ملک کی کرکٹ ٹیم یہ سمجھے کہ کھیل کے میدان میں اس کیساتھ ظلم ہو رہا ہے تو اسے بھی ملک کی توہین کے طور پر ہی لیا جا سکتا ہے لیکن کرکٹ شرفاءکا کھیل ہے اور یہی وجہ ہے کہ اس میں احتجاج بھی شریفوں والا ہی ہونا چاہئے۔ سری لنکا اور انگلینڈ کے درمیان لارڈز کے میدان میں کھیلے گئے تیسرے ٹیسٹ میچ میںایمپائر کے ایک غلط فیصلے کے خلاف سری لنکن کھلاڑیوں نے کمال ذہانت کا مظاہرہ کرتے ہوئے انتہائی انوکھا، پرسکون مگر تاریخی احتجاج کر کے گوروں کو ان کے دیس میں ہی آئینہ دکھا دیا۔ 
ایمپائر نے سری لنکن باﺅلر نوان پردیپ کی اس گیند کو نو بال قرار دیدیا جس پر انہوں نے انگلینڈ کے بلے باز ایلکس ہیلز کو کلین بولڈ کیا تھا تاہم جب ری پلے دیکھا گیا تو اس میں واضح طور پر یہ نظر آیا کہ ان کا پاﺅں لائن کے اندر ہی تھا اور وہ گیند کسی بھی صورت نو بال نہ تھی۔ چونکہ کھلاڑی نوبال سے متعلق ایمپائر کے فیصلے کو چیلنج نہیں کر سکتے ہیں اس لئے انہیں مجبوراً یہ کڑوا گھونٹ پینا پڑا اور نتیجے کے طور پر58 کے انفرادی سکور پر موجود ایلکس ہیلز نے 94 رنز بنا ڈالے اور سری لنکا کو میچ جیتنے کیلئے 362 رنز کا ہدف دینے میں اہم کردار ادا کر گئے۔

ری لنکن کھلاڑی ایمپائر کے خلاف احتجاج تو نہ کرسکے لیکن ڈریسنگ روم میں بیٹھے دیگرکھلاڑیوں نے انوکھا احتجاج ریکارڈ کرا ڈالا۔ انہوں نے ڈریسنگ روم کی بالکونی پر اپنے ملک کا پرچم لٹکا دیا جو تقریباً 45 منٹ تک وہاں موجود رہااور اس طرح انہوں نے کھیل کے میدان میں موجود اپنے کھلاڑیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے کیساتھ ساتھ دنیائے کرکٹ کو بھی تاریخی پیغام دیدیا۔ کرکٹ کی تاریخ میں یہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے اور اس معاملے میں فکرمند لوگوں کیلئے پیغام بھی ہے کہ ایسی بھول چوک بالکل بھی برداشت نہیں کی جائے گی۔
سری لنکن کھلاڑیوں کے اس اقدام کے مستقبل میں کیا اثرات ہوں گے ؟ یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا لیکن اس اقدام نے کرکٹ کے کرتا دھرتاﺅں کو غور کرنے پر ضرور مجبور کر دیا ہے کہ کھیل کی بقاءکیلئے اس طرح کی غلطیوں پر کیسے قابو پایا جا سکتا ہے جو کھیل کا پانسہ ہی پلٹ دیتی ہیں۔

ہم جنس پرست امریکی کلب پر حملہ ، افغان نژاد قاتل کی تصاویر سامنے آگئیں ‎




فلوریڈا (مانیٹرنگ ڈیسک) اتوار کو امریکی ریاست فلوریڈا میں ہم جنس پرستوں کے ایک نائٹ کلب میں حملے کے افغان نژاد ملزم کی تصاویر اور ویڈیوز سمیت دیگر تفصیلات سامنے آگئیں ہیں ۔ 
العربیہ کے مطابق امریکی ٹی وی  ’این بی سی‘ نے اورلینڈو حملے کو  دوسرا ’نائن الیون‘ قرار دیا جبکہ العربیہ نے ہی مائی سپیس نامی سوشل نیٹ ورکنگ ویب سائٹ سے لے کرحملہ آور کی تصاویر جاری کردیں۔
عمر متین کے والد کے مطابق اسے ہم جنس پرستوں سے شدید نفرت تھی۔عمرمتین کے والد میر صدیق  کا کہنا ہے کہ بیٹے نے جو کچھ کیا ،اس کا اسلام کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ۔ میر صدیق کے مطابق عمر متیننے کوئی ایک ماہ قبل میامی شہر میں دو ہم جنس پرستوں کو باہم بوس و کنار کرتے دیکھا تو وہ آگ بگولا ہوگیا تھا،ہمیں یہ تو معلوم تھا کہ اسے ہم جنس پرستی کا عمل سخت ناگوار ہے مگر یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ اس نے اس پر کوئی انتہائی رد عمل ظاہر کرنے کی منصوبہ بندی کی تھی۔ 
میر صدیق نے بیٹے کے ہاتھوں گے کے قتل عام پر معافی مانگی ہے  تاہم اس کے والد کو بیٹے کی ہلاکت پر کوئی دکھ نہیں۔
امریکی میڈیا نے مبینہ طورپر عمر ایس متین نامی افغان نژاد حملہ آورکے زیراستعمال اسلحہ بھی دکھایا  ہے۔ اس نے نائیٹ کلب میں داخل ہونے کے بعد یرغمالیوں کو AR-15 نامی رائفل اور ایک پستول سے اندھا دھند گولیاں برسائیں۔ اس کا اسلحہ اور ’وان‘ ماڈل کی کار اب پولیس کے قبضے میں ہیں۔
ورلینڈو کے پولیس چیف John Mina نے ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ نائیٹ کلب حملے میں زخمیوں میں بیشتر کی حالت تشویشناک ہے۔ پولیس چیف نے حملہ آور کی شناخت عمر میر صدیق متین کے نام سے کی ہے جبکہ فلوریڈا کے گورنر Rick Scott نے واقعے کے بعد اورلینڈو میں ہنگامی حالت نافذ کرتے ہوئے مقتولین کی آخری رسومات میں شرکت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا کی درخواست کی ہے۔
خیال رہے کہ اسی شہر میں دو روز پیشتر ایک مبینہ ذہنی مریض کی فائرنگ سے ایک نوخیز گلوکارہ کرسیٹنا گریمی ہلاک ہوگئی تھیں۔ پولیس نے حملہ آور کو ذہنی مریض قرار دیا تھا۔

Saturday, June 11, 2016

شادی کی تقریب میں دلہن کو آتا دیکھ کر دولہے کی ایسی حالت ہوگئی کہ ویڈیو نے دنیا بھر میں تہلکہ مچادیا، دیکھ کر آپ کی ہنسی بھی روکنے نہ رُکے گی



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) آپ نے شادیوں میں رخصتی کے وقت دلہنوں کو روتے تو دیکھا ہو گا مگر لندن میں گزشتہ روز اس کے برعکس منظر دیکھنے کو ملاجہاں ایک دولہا اپنی شادی کی تقریب میں زاروقطار روتے ہوئے پایا گیا۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق یہ 25سالہ گیبریل ڈیکو (Gabriel Deku) نامی دولہا کسی دکھ کے باعث نہیں رو رہا تھا بلکہ اپنی دلہن کی خوبصورتی پر اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ پایا اور یہ سوچ کر رودیا کہ ”میری ہونے والی بیوی کتنی خوبصورت لگ رہی ہے۔“گیبریل کی شادی 24سالہ انابیلا سے ہو رہی تھی۔ چرچ میں اس کی تقریب جاری تھی۔ مہمانوں کی جم غفیر موجود تھا۔ اس دوران جب دلہن کی والدہ اسے لے کرتقریب میں آر ہی تھی تو جیسے ہی گیبریل نے اپنی دلہن کو سیڑھیوں پر دیکھا وہ فرط جذبات سے رودیا۔ گیبریل کے شہ بالا نے اسے بہتیرا پرسا دیا اور سمجھایا کہ وہ اپنے جذبات پر قابو رکھے مگر وہ ایسا کرنے میں ناکام رہا۔ جب اس کی دلہن اس کے قریب آئی تو وہ اس کے کندھے پر سر رکھ کر بھی روتا رہا۔ گیبریل کی یہ حالت دیکھ کر تقریب میں موجود لوگ اپنے آنسو نہ روک سکے۔ وہ گیبریل کی اپنی دلہن کے لیے محبت کی تعریف کرتے بھی نظر آئے۔

رپورٹ کے مطابق گیبریل کا کہنا تھا کہ ”جب میں شادی کی تقریب کے لیے آ رہا تھا تو میرا موڈ بالکل مختلف تھا۔ میں نے اپنی ماں کے ساتھ شرط لگائی تھی کہ میں روﺅں گا نہیں، لیکن اپنی دلہن کو دیکھ کر میں اپنے جذبات پر قابو نہیں رکھ سکا۔ وہ بہت خوبصورت لگ رہی تھی اور مجھے اس احساس نے مغلوب کر دیا کہ وہ مجھے غیرمشروط محبت کرتی ہے۔“دولہے کے اس طرح زاروقطار رونے کی ویڈیو نے انٹرنیٹ پر تہلکہ مچا رکھا ہے اور صارفین بڑی تعداد میں اس سے محظوظ ہو رہے ہیں۔

مسکان جے کیلئے مسز پاکستان ورلڈ 2016 کا اعزاز



کراچی (ویب ڈیسک) پاکستانی اداکارہ و گلوکارہ مسکان جے کو کینڈا میں ہونے والے مقابلہ میں مسز پاکستان ورلڈ 2016 کا اعزاز دیا گیا، کینڈا میں ہرسال وہاں کی مقامی کمپنی اس مقابلہ کا انعقاد کرتی ہے، اس مقابلہ میں پاکستانی خواتین بھی بھرپور انداز میں شرکت کرتی رہی ہیں، اس مقابلہ میں اس سال پاکستانی اداکارہ، ماڈل اور گلوکارہ مسکان جے نے کامیابی حاصل کر لی. انھوں نے کہا کہ میرے بے شمار پرستاروں کی بے لوث دعاﺅں سے مجھے مسز پاکستان ورلڈ 2016 کا اعزاز ملا ہے ، اس سے میرے فن میں مزید نکھار آئے گا، یہ اعزاز صرف میرا نہیں میرے ملک پاکستان کا ہے. مسکان جے کا مزید کہنا ہے کہ میں مستقبل میں بھی اس طرح کے کئی اعزازات حاصل کرنے کی کوشش کرتی رہوں گی، انھوں نے مزید کہا کہ مجھے ایک بڑے پروجیکٹ کی فلم میں کام کرنے کی آفر ہوئی ہے، جس کا آغاز جلد ہو گا۔

دنیا کا سب سے چھوٹے قد والا جوڑا، قد کتنا ہے؟ پہلی ملاقات کیسے ہوئی؟ ایسی تفصیلات بیان کردیں کہ انسان کیلئے یقین کرنا مشکل ہوجائے




برازیلیا(نیوزڈیسک) جب بات ہو محبت کی تو باقی ہر چیز بے معنی ہو کر رہ جاتی ہے، اور دنیا کے سب سے چھوٹے قد والے جوڑے نے یہ بات ثابت کر دکھائی ہے۔ برازیل سے تعلق رکھنے والے 30 سالہ پالو گیبریل اور 26 سالہ کاتوسیہ ہو شینو دونوں کا قد 3 فٹ سے کم ہے اور وہ دیکھنے میں ننھے منے بچوں جیسے نظر آتے ہیں۔ اخبار ڈیلی میل کے مطابق دونوں کا قد تقریباً 35انچ ہے اور دنیا بھر میں اس قدر چھوٹے قد کے میاں بیوی کی کوئی دوسری مثال موجود نہیں ہے۔ 
پالو کا کہنا ہے کہ دس سال قبل کاتوسیہ سے ان کی پہلی ملاقات انٹرنیٹ کے ذریعے ہوئی۔ دونوں نے MSN میسنجر کے ذریعے چیٹنگ کا آغاز کیا لیکن کاتوسیہ نے ابتداءمیں ہی انہیں رد کرتے ہوئے بلاک کر دیا۔ پالو کا کہنا ہے کہ انہیں کاتوسیہ بہت اچھی لگی تھیں لیکن وہ شروع میں انہیں متاثر نہ کر سکے اور کاتوسیہ نے ڈیڑھ سال تک انہیں بلاک رکھا۔ اس طویل عرصے کے دوران وہ کاتوسیہ کو بھولے نہیں بلکہ اس بات کے منتظر رہے کہ کبھی وہ انہیں ابن بلاک بھی کر دیں گی۔


پھر ایک دن ان کی قسمت نے جوش مارا اور ان کی خوشی کی انتہا نہ رہی کہ کاتوسیہ نے خود ہی انہیں ان بلاک کر دیا تھا۔ ایک بار پھر ان کے درمیان بات چیت شروع ہوئی اور کاتوسیہ کا کہنا تھا کہ اس بار وہ قدرے زیادہ شائستہ تھا۔ کچھ عرصے کی گفتگو کے دوران انہیں احساس ہوا کہ وہ ایک دوسرے کو پسند کرنے لگے ہیں اور پھر انہوں نے ملاقات کا فیصلہ کیا۔ 
کاتوسیہ کہتی ہیں کہ جب پالو پہلی دفعہ ان سے ملنے آئے تو مالٹے رنگ کی شرٹ اورجینز پہن رکھی تھی، اور بڑا سا چشمہ بھی پہن رکھا تھا۔ وہ کہتی ہیں کہ ان کے لباس سے انہیں سخت کوفت ہوئی لیکن شکر ہے کہ اب وہ بہتر ہو گئے ہیں۔ اس جوڑے کے تعلق کو اب 8 سال بیت چکے ہیں اور وہ کہتے ہیں کہ وہ دنیا کا خوش قسمت ترین جوڑا ہے کیونکہ ان کی پسند نا پسند ، زندگی بسر کرنے کا طریقہ اور مستقبل کے خواب ایک جیسے ہیں۔ 
چھوٹے قد والے اس جوڑے کا کہنا ہے کہ وہ ایک دوسرے سے بہت خوش ہیں لیکن دنیا ان کے ساتھ اچھا سکول نہیں کرتی۔ وہ اتنے چھوٹے ہیں کہ اے ٹی ایم مشین بھی استعمال نہیں کر سکتے اور شاپنگ سنٹر میں اپنی پسند کی چیزیں اٹھانے کیلئے بھی ان کا ہاتھ نہیں پہنچتا ،اور یہ منظر دیکھ کر لوگ ان پر ہنستے ہیں۔ کاتوسیہ کا کہنا تھا کہ وہ ان باتوں کے عادی ہو چکے ہیں اور انہیں ایک دوسرے سے ملنے والی مسرت اس قدر زیادہ ہے کہ انہیں کسی اور بات کی فکر ہی نہیں۔ 
کاتوسیہ کا مزید کہنا تھا کہ وہ بچوں کی خواہش بھی رکھتی ہیں لیکن ان کے جسمانی سائز کی وجہ سے ڈاکٹروں نے اسے ایک خطرناک عمل قرار دیا ہے ، تاہم وہ پر امید ہیں کہ کبھی وہ اس نعمت سے بھی مالا مال ہونگی۔ پالو اور کاتوسیہ کہتے ہیں کہ ان جیسے چھوٹے قد کے کسی اور جوڑے کی مثال موجود نہیں لہٰذا وہ اپنا نام گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ ز میں بھی درج کروانا چاہتے ہیں۔